نو عبادات جو خواتین حیض کے دوران کرسکتی ہیں
معاشرہ اور ثقافت

نو عبادات جو خواتین حیض کے دوران کرسکتی ہیں

خواتین کے لئے ہر مہینے کچھ ایسے ایام آتے ہیں جن میں ان کے لئے مخصوص بدنی عبادات کرنا ممنوع ہوتا ہے۔ لیکن وہ ان ایام میں بھی اپنے ایمان کو تازہ رکھ سکتی ہیں۔ کچھ ایسی عبادات ہیں جن کو کرنے سے وہ اللہ کے قریب رہ سکتی ہیں اور اپنے نامہ اعمال میں ڈھیروں نیکیاں شامل کر سکتی ہیں۔

نو عبادات جو خواتین حیض کے دوران کرسکتی ہیں

آئیں ان عبادات کے بارے میں جانتے ہیں جن کو کرنا ہرگز مشکل نہیں ہے پھر بھی ان کے بےشمار فوائد ہیں۔

لوگوں پر سلامتی بھیجنا

ہم دن میں کئی افراد سے ملتے ہیں اور ان پر سلامتی بھیج سکتے ہیں محض ان کو سلام کر کے۔ دوسروں کو سلام کہنا اور انحصار کرنا ایک پسندیدہ کام ہے اور یقینی طور پر، یہ آخر میں معاوضہ ادا کرے گا۔ اس چھوٹے سے عمل کو بھی عبادت سمجھا جاتا ہے اور اس کے بدلے ہمیں ثواب ملتا ہے۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا

تم تب تک جنت میں داخل نہیں ہو سکتے جب تک یقین نہ کر لو اور ایک دوسرے سے محبت نہ کر لو۔ کیا میں تم لوگوں کو کچھ ایسا بتاؤں جس سے تم ایک دوسرے سے محبت کرنے لگو؟ ایک دوسرے پر سلامتی بھیجا کرو

مسلم 1/74، حسن المسلم 224

مسکرائیں اور دوسروں کو مسکرانے کا موقع دیں

سنت پر عمل پیرا ہوکر ہمیں بہت سی ایسی چھوٹی چھوٹی باتیں پتا چلتی ہیں جن سے ہم ڈھیروں نیکیاں کما سکتے ہیں۔ دوسروں سے حسن اخلاق سے بات کرنا اور ان کو بھی خوش ہونے کا موقع فراہم کرنا ایک ایسی چیز ہے جس سے آپ ثواب کمانے سکتے ہیں۔

دوسروں کے لئے مددگار ہونا

بےشک خواتین ایسے دنوں میں بدنی عبادات نہیں کر سکتی لیکن مالی عبادت کرنے سے وہ نیکیاں بڑھا سکتی ہیں۔ غریب لوگوں کی حوصلہ افزائی کریں جتنا آپ سے ہوسکے، ضرورت مند افراد کی مدد کریں جن کو آپ جانتے ہیں اور اپنے آس پاس ایسے لوگوں کو ڈھونڈ کر وسیلہ بنیں۔ اس طرح کا ہر ایک عمل آپ کے اوقاف میں اضافہ کرے گا۔

بیمار کی عیادت کریں

دوستانہ رویہ رکھنا اور کمزور یا بیمار افراد کے ساتھ رہنا اور اللہ کی مدد کرنا، اللہ کے مطابق احسان کا بہت اچھا مظاہرہ ہے۔ اسی طرح ہمیں اللہ کی طرف سے بہت اچھی طرح سے، معاوضہ دینے کے لئے، نمایاں طور پر زیادہ قابل ستائش محسوس ہوتا ہے۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا

جب کوئی مسلمان اپنے بیمار بھائی کی عیادت کے لئے جاتا ہے تو وہ جنت کے ثمرات جمع کرتا رہتا ہے یہاں تک کہ وہ واپس آجائے۔

مشکت المصابیح 1527

دوسرے لوگوں کو دعوی پر بلانا

اس طرح کا کام آپ کے ویب پر مبنی سوشل نیٹ ورکنگ اکاؤنٹس کے ذریعہ ان دنوں زیادہ آسانی سے ممکن ہے۔ اپنے فیس بک پر پوسٹ کا اشتراک کرنا یا دن بدن اسلامی پوسٹ کو ٹویٹ کرنا آپ کی عقیدت کو اپ گریڈ کرے گا اور آپ کے عظیم کاموں میں اضافہ کرے گا۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا

مجھ سے معلومات حاصل کر کے آگے پہنچائیں یہاں تک کہ اگر یہ صرف قرآن کی آیت ہی کیوں نہ ہو۔

مشکت المصابیح 198

کثرت سے استغفار کہنا

استغفراللہ کا ورد کرتے رہنا اور اللہ سے بخشش طلب کرنا اور ایسے دنوں میں اللہ کے حضور معافی کی تلاش میں رہنا، آپ کو زیادہ آباد ہونے کا احساس دلائے گی۔ کھانا پکانے، ٹہلنے اور دن کے وقت آپ کے دن کے کام کرتے وقت آپ استغفراللہ کی تسبیح با آسانی کرسکتی ہیں۔ اللہ کو یاد کرنا اللہ کے مطابق ایک انتہائی تازگی والی عبادت ہے۔ اللہ تعالٰی قرآن مجید میں فرماتا ہے

اے اہل ایمان خدا کا بہت ذکر کیا کرو۔ اور صبح اور شام اس کی پاکی بیان کرتے رہو۔

سورة الأحزاب آیت 41،42

کسی رشتہ دار سے ملنا

قریبی رشتے داروں سے ملنا، اچھے تعلقات رکھنا اور خاندانی تعلقات کو بڑے اہداف کے ساتھ برقرار رکھنا اسلام میں انتہائی تازگی والی عبادت ہے۔ یہ کرنے سے آپ بہت سی نیکیوں کے حقدار بن سکتے ہیں۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا

جو شخص اللہ پر اور آخرت کے دن پر ایمان رکھتا ہو اسے اپنے مہمان کی عزت کرنی چاہیئے اور جو شخص اللہ اور آخرت کے دن پر ایمان رکھتا ہو اسے چاہئے کہ وہ صلہ رحمی کرے، جو شخص اللہ اور آخرت کے دن پر ایمان رکھتا ہو، اسے چاہیئے کہ اچھی بات زبان سے نکالے ورنہ چپ رہے۔

صحیح بخاری 6138

قرآن مجید کی تلاوت سننا

اس امکان سے قطع نظر کہ آپ قرآن پاک کو چھو نہیں سکتے ہیں، آپ اس کی ویب یا ٹیلی ویژن پر تلاوت سن سکتے ہیں۔ اس سے آپ کو اللہ کو کبھی فراموش نہ کرنے میں مدد ملے گی اور آپ کو دوسرے خاص و عام بےجا کاموں سے باز رہنے کے لئے مدد ملے گی۔

جن لوگوں کی آپ کو پرواہ ہے ان کے لئے دعا کرنا

اس حقیقت کے باوجود کہ آپ نماز نہیں ادا کرسکتے ہیں یا مقدس قرآن کی تلاوت نہیں کرسکتے ہیں تاہم آپ محض دوا کرسکتے ہیں۔ اپنے لئے اور جن کے لئے آپ پسند کرتے ہیں یا وہ آپ کے عزیز و اقارب ہیں، ان کے لئے مسلسل دعا کرنا نتیجہ خیز ہے۔

حوالہ: انسٹاگرام

نمایاں تصویر: پکسلز

Print Friendly, PDF & Email

مزید دلچسپ مضامین

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *